2

کشمیریات مستقل مضمون کے طور پر نصاب میں شامل

اوکاڑہ، کشمیریات کو مستقل مضمون کے طور پر نصاب میں شامل کیا جائے ، نعمان الجبار
, شہدائے جموں کے مقدس لہو کو طلباء خراج عقیدت پیش کرتی ہے،رہنما انجمن طلباء اسلام
اوکاڑہ(غضنفر عباس شعور نیوز)
نوجوان نسل تاریخ کشمیر سے بابلدرکھا گیا کشمیریات کو مستقل مضمون کے طور پر نصاب میں شامل کیا جائے کشمیری قوم شہادت کے جذبے سے سرشار ،صوفیائے کی فکر کو ماننے والی ہے شہدائے جموں کے مقدس لہو کو طلباء برادری خراج عقیدت پیش کرتی ہے ان خیالات کا اظہارطالب علم رہنما صدر انجمن طلباء اسلام پاکستان نعمان الجبار، سیکرٹری نشر اشاعت انجمن طلباء اسلاحسنین رضا مصطفائی، ناظم اے ٹی آئی اسلامک یونیورسٹی حامد وڑائچ، حماد الرحمن جامی ودیگر نے انجمن طلباء اسلام اوکاڑہ کے ایک وفد سے اسلام آباد میں ملاقات کے دوران کیا ان رہنمائوں نے کہا کہ شہدائے جموں کا خون ایک دن ضرور رنگ لائے گا۔
ظلم کی رات چاہئے کتنی طویل کیوں نہ ہو صبح ضرور ہو کر رہے گی۔
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم پر عالمی دنیا کی خاموش اور قومی سیاست دانوں کی روایتی بیان بازی لمحہ فکریہ ہے مقبوضہ وادی میں بڑھتے ہوئے مظالم ،موئے تراشی،قتل غارت، ظلم، جبر اور بربریت نے بھارتی نام نہاد جمہوریت کی کلغی کھول دی ہے ۔کشمیریوں پر بھارتی مظالم پر عالمی انسانی حقوق کی تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی لمحہ فکریہ ہے ۔
ایسے حالات میں قومی سیاست دانوں کو روایتی بیان بازی سے ہٹ کر مسئلہ کشمیر کے حل کی جانب سنجیدہ اقدامات کرنے کی ضرورت ہے ۔بد قسمتی سے آج لیڈر شپ کا فقدان بڑھ رہا ہے جسکی بڑھی وجہ طلباء یونین پر مسلسل پابندی ہے اگر وطن عزیز میں طلباء یونین بحال کر دی جائے تو نااہل ، کرپٹ، اور جاگیردارانہ سیاست کا خاتمہ ممکن ہے انجمن طلباء اسلام کشمیریوں پر بھارتی مظالم کی بھرپور مذمت کرتے ہوئے عالمی طاقتوں سے یہ سوال پوچھتی ہے جانوروں کے حقوق کا تحفظ کرنے والوں کو مقبوضہ وادی میں بھارتی قتل و غارت نظر کیوں نہیں آتی۔
انجمن طلباء اسلام کے رہنمائو ں نے کہا کے اسوقت مسئلہ کشمیر کو روایتی انداز میں پیش کرنے کے بجائے حقیقت پسندی سے بیان کرنے کی ضرورت ہے مقبوضہ کشمیر میں جاری تحریک آزادی کی مکمل بھاگ دوڑ نوجوانوں کے ہاتھ میں ہے نوجوان کسی بھی قوم میں ریڑھ کی ہڈی کی حثیت رکھتے ہیں آزاد کشمیر کے نوجوانوں میں بے پناہ صلاحیتیں موجود ہیںلیکن نظریاتی تربیت کے فقدان کی وجہ سے نوجوان مسئلہ کشمیر کی حقیقت سے بابلد اور نا آشنا ہیں جسکی ایک وجہ شعور کی کمی اور وسائل کا نہ ہو نا بھی ہے اگر نوجوانوں کی فکری اور نظریاتی خطوط پر تربیت کی جائے تو یہاں کا ہر نوجوان ،محمد بن قاسم ، غازی علم الدین شہید اور ن مظفر شہید وانی بن سکتا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں