42

عمر 49 سال ہے 30 سال سے سیاست

پریس ریلیز
49 سال عمر ہے گذشتہ 25 سے 30 سال سے سیاست کر رہی ہوں: سابق سینٹر پری گل آغا کا حیرت انگیز انکشاف
سابق صوبائی وزیر قانون محمد بشارت راجہ سے شادی کا سال معلوم نہیں: تعلیمی قابلیت بارے سوال پر عدالتی مداخلت کے باوجود جواب دینے سے انکار
مسلم لیگ ق کی سابق سینٹر پری گل آغا کی جانب سے سیشن عدالت میں دائر ہتک عزت دعوہ کی سماعت
لاہور ( کورٹ رپورٹر شعور نیوز ) ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج حفیظ الرحمان کی عدالت میں سابق سینٹر پری گُل کی جانب سے دائر کردہ استغاثہ کی سماعت ہوئ، دوران جرح سیمل راجہ کے وکلاء غلام مجتبیٰ چودھری ، عمیر جاوید ، رانا عدنان ایڈووکیٹس نے پری گُل آغا سے تعلیمی قابلیت سے متعلق پوچھے گئے سوال پر عدالتی مداخلت کے باوجود جواب دینے سے انکار کرتے ہوئے حیرت انگیز اور چونکا دینے والے انکشافات کر دیے۔ فاضل عدالت کے روبرو اپنی عمر 49سال جبکہ گذشتہ 25سے 30سال کی عملی سیاست کا دعوی کر دیا ۔سابق صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت سے ہونے والی شادی کی تاریخ سے لاعلم پری گل آغا نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ وہ آزاد حیثیت سے بلوچستان سے ممبر ڈسٹرکٹ اسمبلی ، ممبر صوبائی اسمبلی و سینٹر منتخب ہوئیں اور بعدازاں مسلم لیگ ق میں شمولیت اختیار کی مگر اب ان کے پاس مبینہ طور پر مسلم لیگ ق کا کوئی عہدہ نہ ہے۔ عدالت کے روبرو قلمبند کروائے گئے بیانات میں پہلے اپنا پیشہ سینٹر پھر کاشت کار ظاہر کرنے والی سابق سینٹر کوئٹہ کی مصروف ترین شاہراہ سریاب روڈ پر زرعی رقبہ کی قابض و مالک ہونے کا دعوہ کر بیٹھی ۔ دلچسپ اور حیران کر دینے والے جوابات کے بعد فاضل عدالت نے کیس پر مزید سماعت 21 فروری تک ملتوی کر دی ۔ دوران جرح سیمل راجہ کے وکلاء کی جانب سے پری گُل آغا سے پوچھے گئے سوالات پر پری گُل کے وکلاء کی مسلسل مداخلت ہوتی رہی جس پر سیمل راجہ کے وکلاء نے فاضل عدالت کے روبرو اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا ۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں