717

عمران خان کی تیسری شادی اور اعلیٰ عدلیہ کا کردار ، کامران خان

سوچتا ہوں کہ زندگی کیا سے کیا ہو جائے گی، کبھی جو ہم ن لیگ کو پاکستان کی تعمیرو ترقی کی علامت سمجھتے تھے آج معاشرے کے بگاڑ کا ذمہ دار ان کو گردانتے ہیں لیکن کیا وجہ ہے کہ ہم اس نتیجے پر پہنچے، آج پاکستان کے ہر گلی محلے میں گینگسٹرز کا وجود بڑھ رہا ہے، ہر دوسرا نوجوان لڑکا قبضہ گروپوں کا ہاتھوں اپنا مستقبل گروی رکھ چکا ہے، چوہدری صاحب، ملک صاحب، گجر صاحب اور بٹ صاحب یہ وہ فقرے ہیں جو لاہور کے ہر دوسرے محلے میں سننے کو ملتے ہیں اور ہماری قوم گر چکی ہے، اخلاقی طور پر، سماجی طور پر، ہر ایک پہلو میں ایک تباہی ہے، ایک حماقت ہے، دل روتا ہے ہر ساعت یہ سوچ کر کہ زندگی کیا سے کیا ہو رہی ہے، ایک بات عمران خان کی تیسری شادی کی بھی ہوجائے، بشریٰ مانیکا … ایک پیرنی ایک عظیم خاتون اور جس طرح ان کی عمران خان سے ملاقات ہوئی، ان کے حکم سے ریحام سے شادی ریحام سے طلاق ہوئی، عمران خان نے اپنی کوٹھی گرا دی ان کے کہنے پراور اپنی زندگی کے معاملات کو ایک نئی راہ پر گامزن کردیا ہے، دیکھتے ہیں کہ یہ سفر کس ڈگر جاکر ٹھرتا ہے، عمران خان ایک نئی سوچ کے ساتھ آگے بڑھ رہے ہیں، اس نئئے قدم میں ان کوبزرگوں کی خوشنودی حاصل رہی ہے، اعلیٰ عدلیہ کا کردار پاکستان کی سیاست میں بہت اہم ہوتا جارہا ہے نواز شریف کو گاڈ فادر کہنے کے ساتھ ساتھ اقامہ ایشو پر نواز شریف کو نااہل قرار دینا پاکستانی سیاست میں ایک بھونچال لے آیا مسلم لیگ ن پر سخت وقت کے آغاز کے ساتھ ساتھ نواز شریف کی جانب سے ایک نیا قومی بیانیہ سامنے آیا، نواز شریف نے عدل بچاؤ کی تحریک کا آغاز کیا اور جی ٹی روڈ پر لانگ مارچ کے ساتھ ضمنی الیکشنز میں کامیابی کا راستہ اپنایا، جس نے قومی سطح پر نواز شریف کو ایک مضبوط لیڈر بنا دیا، لودھراں الیکشنز میں کامیابی ایک بہت بڑی تبدیلی ثابت ہوئی اور اب پورے ملک میں ن لیگ کی ہوا چل پڑی ہے، وزیراعظم پاکستان نے عدلیہ سے ٹکراؤ کو رد کرتے ہوئے قومی اسمبلی میں نئی بحث کے آغاز پر زور دیا ہے، شاہد خاقان عباسی کی جانب سے پہلی مرتبہ نوازشریف کی عدل بچاؤ پالیسی کا اعلان کیا گیا ہے اور عدلیہ کی نواز شریف پر بے جا تنقید پر افسوس کا اظہار کیا گیا ہے، وزیراعظم نے پاکستان میں ایک تعمیری سوچ کو متعارف کروانے ہر زور دیا ہے، جس کے تحت عدلیہ، پارلیمنٹ اور فوج کے باہمی تعلقات کو مضبوط بنانے پر زور دیا ہے، تاکہ پاکستان ایک مضبوط جمہوری ملک بن کر ابھرے

اپنا تبصرہ بھیجیں