15

نواز شریف کی نااہلی او شہباز شریف کی صدارت، کامران خان

    میاں محمد نواز شریف کو عدلیہ نے پارٹی صدارت کے لئیے نااہل قرار دے دیا اور آج الیکشن کمیشن نے نوازشریف کی جانب سے سینٹ کی جاری کردہ ٹکٹوں کو ماورائے آئین قرار دے دیا ہے جس کے بعد مارچ میں ہونے والے سینٹ الیکشنز میں مسلم لیگ کی جانب سے کوئی پارٹی امیدوار شرکت نہیں کرے گا اور مسلم لیگ ن کے امیدوار آزاد حیثیت میں الیکشنز میں حصہ لیں گے یہ نوازشریف کے لئیے بدترین سیاسی بحران ہے اور اس قدر نقصان کے بعد آج شہباز شریف کو پارٹی صدر بنانے کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے آج جب چوہدری نثار نواز شریف کے ساتھ نہیں ہیں اور پارٹی آج تقسیم در تقسیم کا شکار ہے کچھ دیر پہلے کلثوم نواز کا نام بھی پارٹی صدارت کے لئیے سامنے آیا لیکن پھر پارٹی کے پریشر پر شہباز شریف کا نام سامنے لایا گیا لیکن سینٹ الیکشن میں ن لیگ کو بہت بڑا دھچکا لگنے کا کوئی امکان نظر نہیں آتا مسلم لیگ ن کا ووٹر سابق صدر جنرل مشرف کے کیس میں پیش رفت کے بغیر چیف جسٹس کا کوئی بھی اقدام ماننے کو تیار نہیں کیا صرف جمہوری وزیراعظم کا احتساب ہوسکتا ہے اور فوجی حکمران احتساب سے مبرا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں