19

لاہور ہائی کو رٹ کے چیف جسٹس کی خصوصی ہدایت پر ایڈویز پنجاب باروکونسل ( انٹر نیشل کمیٹی) کی سول ججز کمیٹی کے چیر مین و سنیر جسٹس لاہور ہائی کو رٹ مسٹر جسٹس انوارالق کے ساتھ اپنے وفد کے ہمرا ہ تفیصلی ملاقات

صدر ینگ لائر فورم چوہدری وسیم کھٹانہ، غلا م مجبتی چوہدری ، احمد سعید، چوہدری عمیر جاوید شامل تھے اور مسٹر جسٹس انوارالق کی طرف سے چایئے پیش کی گی اور ان کو خوس امدید کہا گیا اور نو جوان وکلاء کے سول ججز کے امتحان تما م تحفظات بتانے کا کہا اور کہا گیا کہ ان کو دور کیا جائے سکے جس پر ان سے مطالبات پیش کے گے کہ سول ججز کا متحان ہر سال لیا جائے اور پاسنگ مارکس کم کئے جائیں لازمی مضمون کو ختم کا جائے تحریری امتحان میں نرمی برتی جائے حاضر سروس ججز کا بھی امتحان لیا جائے اور امتحان کی چکینگ ججز کی بجائے قانون کے استاد چیک کر یں سول ججز کے پیپر کا طریقہ کار ماڈل پیپر کو لاہور ہائی کورٹ کی webپر ڈالا جائے تاکہ وکلاہ کے لے آسانیاں پیدا ہوں۔اور طالبہ کو تیاری کے لے منا سب وقت دیا جائے جنرل نالج اور اردو کا پیپر اسان سے اسان بنا یا جائے۔ جس پر
جسٹس لاہور ہائی کو رٹ مسٹر جسٹس انوارالق صاحب نے بتا یا کی چیف جسٹس نے میری خصوصی ڈیوٹی لگائی ہے کہ نوجوان وکلاہ کے مسائل حل کئے جائیں جو بھی سوججز سے منسلک ہیں کیونک میں سول ججز کی کمیٹی کا چیرمین ہو ں ۔ انہوں نے نوجوان وکلاہ کے تما م مطالبات کو منظو ر کر تے ہو کہا کہ سول ججز کا نیا ایڈ ائندہ تقر یبا دس روز میں شا ئع کر دیا جا ے گا اور تیار ی لے لے چھ ما ہ کا وقت دے دیا جا ئے گا۔اور سول ججز کا امتحان کو شش کر ئیں گے گے ہر سا ل مارچ اور ستمبر میں لے اور ایڈیشنل ججز کا پیپر سا ل میں ایک دفع لیا جائے،اس معوقع پر انہوں نے بتا یا کہ ججز کی بہت کمی ہے مگر و سائلوں کی کمی بھی بہت ہے اور انہوں نے مزید بتا یا کہ سول ججز پیپر کا پیٹرن کوشش کر ئیں گے کیہ webپر ڈال دیا جائے گا انہوں نے مزید بتا یا کہ پیپر کی چیکنگ لاہور ہائی کورٹ کے رٹیاڈ ججز چیک کر ئیں گے انہوں نے مزید بتا یا کہ نئے آ نے والے ججز کو پہلے چھ ماہ جوڈیشل اکیڈ می میں ٹرینیگ دی جائے گی اور دو ما ہ کی عدالت کی ۔مز ید بتا یا کہ جو اکیس لڑ کے پاس ہوئے ہیں ان میں سے صرف آتھ کامیاب نظر آ رہے ہیں جس کا زرلٹ ایک یا دو دن میں ا جائے گا۔بتایا کہ پیپر کو اسان سے آسان بنایا جائے گا کیونکہ کی ہم جانتے ہیں کہ پہلا پیر بہت مشکل تھا اب ایسا نہ ہو گاْ ۔اور جنرل نالج اور اردو کا پیپر کو OBjective کی طرز ہو گا اور اسان وہ گا جس میں B.A.تک سے زیاد ہ کا کوئی سوال نہ پو چھا جائے۔ تحریری امتحان میں نرمی برتی جائے گی۔انہوں نے مذ ید بتا یا کہ جو ججز میرٹ پر فیصلہ نہیں کر تا آ و اپ سب میری ٹیم بنا ئیں میں ان کو فوری فارغ کر دوں گا میری دروازے کھولیں ہیں ججز کے خللاف شکا یات لایئیں میں حل کر وں گا ۔ جہاں لگے کی فیصلے میرٹ پر نہیں ہو ا اس کی اڈر شیٹ مجھے بھیج دیں میں فوری اس پو نوٹس لوں گا ۔ وفد نے ان کا نوجوان وکلا ء کے تما م مطالبات پوری کر نے ان کا اور چیف جسٹس کا بے حد شکریہ ادا کیا ۔
میڈ یا سے بات کرتے ہو ئے دفد نے کہا کہ جلد چیف جسٹس اف پاکستان سے بھی ملاقات کی جائے گی جس میں نوجوان وکلاء

اپنا تبصرہ بھیجیں