89

صوبائی دارالحکومت لاہور میں سابق وزیراعلی شہباز شریف کی رہائش گاہ کے باہر پولیس اور مسلم لیگ نون کے کارکنوں کے درمیان جھڑپیں

لاہور(شعور نیوز)صوبائی دارالحکومت لاہور میں سابق وزیراعلی شہباز شریف کی رہائش گاہ کے باہر پولیس اور مسلم لیگ نون کے کارکنوں کے درمیان جھڑپیں شروع ہوگئی ہیں. اطلاعات کے مطابق قومی احتساب بیورو (نیب) کی جانب سے مسلم لیگ نون کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں شہباز شریف کے گھر آج دوبارہ چھاپہ مارے جانے کے خلاف وہاں آنے والے مسلم لیگ نون کے کارکنوں اور پولیس کے درمیان ہاتھا پائی ہو ئی ہے جبکہ بعض مقامات پر نون لیگی کارکنوں نے پولیس پر پتھراﺅ بھی کیا ہے.
سیکورٹی کے پیش نظر پنجاب حکومت نے اسمبلی ہال چوک‘مال روڈ‘سول سیکرٹریٹ‘گورنر ہاﺅس ‘ایوان وزیراعلی سمیت اہم سرکاری عمارتوں کی حفاظت پر مامور پولیس کی نفری بڑھادی ہے .

کچھ غیرمصدقہ اطلاعات کے مطابق پنجاب اسمبلی کی عمارت کی سیکورٹی کے لیے رینجرزسے مدد طلب کی گئی ہے. قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور کی ٹیم کی جانب سے مسلم لیگ نون کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں شہباز شریف کے گھر آج دوبارہ چھاپہ مارا گیا ہے. چھاپے کے دوران نیب کی ٹیم کے ہمراہ آئے ہوئے پولیس اور رینجرز کے اہلکاروں نے میاں شہباز شریف کے گھر کو مکمل محاصرے میں لے لیا ہے، اطراف کی گلیوں میں بھی رینجرز اور پولیس اہلکار موجود ہیں جو لیگی کارکنوں کو وہاں نہیں آنے دے رہے.
پولیس ذرائع کے مطابق ماڈل ٹاﺅن میں مزید نفری روانہ کی گئی ہے جبکہ ریسکیو کی گاڑیوں کو بھی وہاں موجود رہنے کی ہدایت کی گئی ہے. پولیس کے شہباز شریف کی رہائش گاہ کے راستے روک لینے کے باوجود اطراف کی گلیوں میں مسلم لیگ نون کے کارکن بڑی تعداد میں جمع ہو گئے ہیں جو اپنے راہنماﺅںکے حق میں اور نیب کے خلاف نعرے لگا رہے ہیں. نیب کی ٹیم آج مکمل تیاری کے ساتھ آئی ہے، اس کے ہمراہ حمزہ شہباز کی گرفتاری کا وارنٹ بھی ہے، نیب حکام کا کہنا ہے کہ نیب کی ٹیم کے پاس ٹھوس شواہد ہیں اور آج وہ حمزہ شہباز کو لازمی گرفتار کریں گے.
لاہور میں نیب کی ٹیم کا شہبازشریف کے گھر کا 24 گھنٹے کے دوران دوسری بار چھاپہ ہے، پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری نے شہباز شریف کی رہائش گاہ ایچ 96 کا محاصرہ کر لیا ہے، سیڑھی بھی پہنچا دی گئی ہے، پولیس اور رینجرز کے ساتھ خواتین اہلکاروں کی بڑی تعداد بھی موجود ہے.

نیوز ایڈیٹر
میاں مزمل منیر

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں