167

چینی آٹا بحران پر ایف آئی اے رپورٹ کے بعد وفاقی اور پنجاب حکومت میں تبدیلیاں

لاہور (کامران اکرم خان) چینی اور آٹا بحران کے بارے میں رپورٹ آنے کے بعد جہانگیر ترین کو عہدے سے ہٹایا گیا جبکہ جہانگیر ترین کا کہنا ہے کہ وہ کبھی زراعت کی ٹاسک فورس کے چئیرمین نہیں رہے
اس کے بعد وفاقی وزیر خسرو بختیار کی وزارت تبدیل کردی گئی، مشیر زراعت اور چئیرمین شوگر کمیشن عبدالرزاق داؤد کو بھی عہدوں سے الگ کردیا گیا ہے اس کے ساتھ ساتھ پنجاب کے وزیر خوراک سمیع اللہ چوہدری کو بھی وزارت سے الگ کردیا گیا ہے اور باقی کارروائی 25 اپریل کو فرانزک آڈٹ رپورٹ آنے تک موخر کردی گئی ہے اس تمام صورتحال کے بعد سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا 25 اپریل کو رپورٹ آنے کے بعد ذمہ داران کو سزا دی جائے گی یا گزشتہ سالوں میں ہونے والے سانحات کی طرح رپورٹ صرف کاغذوں تک محدود رہے گی جہاں انصاف صرف لفظوں تک اور سزا صرف صفحوں میں موجود رہے گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں