556

پیتل کے برتن

کامران اکرم خان

آج بڑے دن بعد ایک آئیڈیا سامنے آیا جس نے دل جھنجھوڑ کے رکھ دیا بڑے محترم ایپکس گروپ آف کالجز کے شکیل گجر صاحب نے ایک ویڈیو شئیر کی پیتل کے برتن جس نے مجھے اندر تک رشتوں محبتوں کی دولت سے سرفراز کردیا کمال کے الفاظ ایک بڑے مہذب سکھ کی زبان سے سننے کو ملے کیا بات کردی اس نے کہ انسانی رشتے پہلے پیتل کے برتنوں کی طرح لمبے عرصے تک چلنے والے ہوتے تھے دس دس بیس بیس سال گھر کی مائیں اپنا جہیز سنبھال کے رکھتی تھیں محبتیں سانبھ کے رکھتی تھیں بچوں میں بھی اسی طرح محبت قربت بڑھتی تھی ایک دوسرے کا احساس ایک دوسرے کی محبت سب کو سانبھ کے رکھتی تھی لیکن پھر سٹیل کے برتن رشتے پانچ دس سال تک پھیل گئے اس کے بعد شیشے کے برتن آئے رشتے کمزور ہوگئے بنیادیں ہلنے لگیں تعلقات بہت ازک ہوگئے لیکن جب ڈسپوزیبل برتن آئے فاسٹ فوڈ آیا تو انسانوں نے بس مطلبی رشتے رکھنا شروع کردئیے اور احساس محبت جاتا رہا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں